ស្លាក » News

Grace Poe regains lead in survey

                                            “OVERWHELMED AND HUMBLED’

Independent presidential candidate Senator Grace Poe regained the top spot in the latest pre-election presidential preference survey, pollster Pulse Asia announced Saturday. 280 more words

News

BRILLIANT! Police rescue kidnapped victims in Rivers within hours

By PRECIOUS IBINABO DAVIDS, Port Harcourt

The Rivers State Police Command has successfully rescued Mr. Austin Ajah and Mrs. Winifred Frank few hours after they were kidnapped on Saturday at about 6:19 pm near Siat Palm farm in Ubima, Ikwerre Local Government. 251 more words

Out Now! BookIsh Plaza eZine february 2016

The FEBRUARY issue is out now! BookIsh Plaza is your online bookshop for Caribbean literature.

In this issue:

  • Aruban Literary Life
  • The Age of Antoine ‘Twan’ Maduro…
  • 26 more words
News

MAGANES: Cojuangco's opponents are desperate

 

While the official political campaign for local candidates for May 9 elections is still 45 days ahead as of this writing, the once peaceful political situation in Pangasinan is beginning to crack with the desperate moves of the camp of Governor Amado T. 974 more words

News

کیا 46ارب ڈالر کامنصوبہ ناکام ہوگیا ؟

تحریر:فہیم اختر(ممبر پی ایف سی سی )
خیبر پختونخواہ سے تعلق رکھنے والے مشہور ٹی وی اینکر سلیم صافی نے اپنے ٹی وی ٹاک شو جرگہ میں ”چائینہ پاکستان اقتصادی راہداری ،حکومتی دعوے اور چشم کشاحقائق“میں کئی انکشافات کئے اور بڑ ے پردہ نشینوں کو بے نقاب کیا انہوںنے چشم کشا حقائق کو سامنے لاتے ہوئے چائینہ پاکستان اقتصادی راہداری کو متنازعہ قراردیا اب تک حکومت سمیت کئی جماعتوں کی جانب سے بلائی گئی کل جماعتی کانفرنسز کا حوالہ بھی دیا جن میں ترجیحی بنیادوں پر مغربی روٹ کی تعمیر کا فیصلہ کیا گیا لیکن جن دستاویزات کو انہوںنے نشر کیا ان کے مطابق مغربی روٹ کا کسی بھی میمورینڈم آف انڈرسٹینڈنگ میں زکر نہیں ہے سلیم صافی نے لاہور ٹو کراچی موٹروے سمیت اورنج ٹرین منصوبے کو بھی سی پیک میں شامل کرنے پر گہرے دکھ کااظہار کیا اس کے علاوہ اس حقیقت کی بھی قلعی کھول دی کہ اب تک وفاقی حکومت نے اقتصادی زون کے حوالے سے قوم کو گمراہ کررکھا ہواہے ۔مذکورہ پروگرام دلچسپ اور سنسنی خیز انکشافات پر مبنی تھا مجبوراً بھی ریموٹ کو چھیڑنا نہیں پڑا تاہم جب اورنج ٹرین کا زکر آیا تو اس کے ساتھ ہی اورنج ٹرین منصوبے کا پنجاب حکومت کی جانب سے اشتہار چلتا رہا ہے ۔
اس ’ ’چائینہ پاکستان اقتصادی راہداری ،حکومتی دعوے اور چشم کشاحقائق“میں میزبان سلیم صافی نے درج بالا نکات کی بنیاد پر 46ار ب ڈالر کے منصوبے کو متنازعہ قراردیا ۔کیا واقعی 46ارب ڈالر کا یہ منصوبہ متنازعہ ہوگیا ہے یا 45منٹ کا مذکورہ پروگرام متنازعہ تھا ؟ اس سے قبل ان نکات اور اس منصوبے کے بنیادپر روشنی ڈالنے کی ضرورت ہے ۔
46ارب ڈالر کا منصوبہ پاکستان کے حدود میں داخل ہوکر 3راستوں میں بٹ جاتا ہے ایک راستہ جس پر سلیم صافی کو دکھ اور غم ہے یعنی مغربی راستہ اور دوسرا راستہ پنجاب لاہور اور ملتان کے زریعے گوادر تک پہنچ جاتا ہے ان دونوں راستوں کو روٹ ہی لکھا اور پکارا گیا ہے دونوں راستیں حویلیاں اور مانسہرہ کے قریب سے جدا ہوتے ہیں میزبان موصوف کو اگر قوم کا دکھ ہوتاتو اس کے تیسرے راستے پر بھی بحث کرتا اگر واقعی یہ منصوبہ متنازعہ ہے تو وہ مغربی روٹ کو نظر انداز کرنے یا مشرقی روٹ سے راستہ گزارنے سے نہیں بلکہ ابتدائی روٹ کو نظر انداز کرنے متنازعہ ہوگا حویلیاں اور مانسہرہ تک پہنچنے والے اس راستے کو ہم ابتدائی روٹ قرار دیتے ہیں جس کا کوئی بدل نہیں ہے مغربی روٹ کی بجائے مشرقی روٹ سے گزارا جائے تو بھی 46ارب ڈالر کا منصوبہ پایہ تکمیل تک پہنچ جاتا ہے کیونکہ اس راہداری منصوبے میں دو مقامات سب سے اہم ہیں ایک گوادر جس تک پہنچنے کے لئے مختلف راستیں ڈھونڈے جارہے ہیں اور دوسرا مقام گلگت بلتستان جس سے اس کی ابتدا ہونی ہے اس راستے کا کوئی دوسرا آپشن نہیں ہے ”چائینہ پاکستان اقتصادی راہداری ،حکومتی دعوے اور چشم کشاحقائق“کی روشنی میں بھی ،جوکہ صرف نظر انداز کرنے اور محرومیوں کے کا زکر تھا اور یہ ان تمام سٹیک ہولڈرز کی ترجمانی بھی تھی جن کو نظر انداز کیا گیا ہے بدقسمتی سے اس پروگرام میں بھی اس بنیادی روٹ کو نظر انداز کرنے کا زکر نہیں آسکا سلیم صافی یاد رکھیں کہ جتنا دکھ اور غم آپ نے وفاقی حکومت پر دکھا یا ہے اتنا دکھ اور غم آپ اور وفاقی حکومت پر گلگت بلتستان کے عوام کا ہے وفاقی حکومت کا تو خیر انہوںنے بڑے بڑے سیاستدانوں کو بھی اندھیرے میں رکھا ہے لیکن آپ کے اس پروگرا م میں کم از کم اس بنیادی روٹ کا زکر آنا چاہئے تھا لیکن وہ بھی آپ سے نہیں ہوسکا ۔آپ نے پروگرام میں منصوبہ کو متنازعہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ مغربی روٹ کا زکر کسی بھی میمورینڈم آف انڈرسٹینڈنگ (MOU)میں نہیں لیکن بنیادی روٹ جو قریباً600کلومیٹر راستے پر محیط ہے کو بھول گئے ،آپ کو لاہور اور کراچی موٹروے اور اورنج ٹرین منصوبے کو سی پیک میں شامل کرنے پر افسوس ہوا لیکن پورے ملک میں سب سے زیادہ پاور منصوبے میں پوٹینشل رکھنے والے اس خطے گلگت بلتستان کو نظر انداز کرنے پر آپ کے چہرے میں کسی قسم کی لہر نہیں دوڑی اقتصادی زون کے حوالے سے قوم کو گمراہ کرنے پر بھی گلگت بلتستان کا یا د نہیں آیا اگر مغربی روٹ کو نظر انداز کرنے پر وہ رویہ جو آپ نے اپنے ٹاک شو میں اپنایا وہ رویہ بنیادی روٹ کو نظر انداز کرنے پر گلگت بلتستان کے عوام اپنا ئیں تو آپ خود اندازہ لگائیں ۔موصوف نے اس پروگرام میں صرف مغربی روٹ کو نظر انداز کئے جانے پر منصوبے کو متنازعہ کہہ دیا لیکن حقیقت تو یہ ہے کہ اگر 46ارب ڈالر کا منصوبہ جو کہ ایک متنازعہ علاقے سے ہی گزررہا ہے اور وہاں کو مکمل نظر انداز رکھا جارہا ہے اور یہی سلسلہ جاری رہا تو تب ہی یہ منصوبہ متنازعہ نہیں بلکہ ناممکن ہوگا ۔گلگت بلتستان ایک صدارتی آرڈیننس کے رحم و کرم پر ہے آپ کو پھر بھی قوم کا خیال نہیں آیا دلچسپ بات تو یہ ہے کہ اس راہداری منصوبے میں گلگت بلتستان کو متنازعہ ہونے کی بنیاد پر نظر انداز کیا جارہاہے لیکن گزارنا یہی سے ہے جس کی وجہ سے نوبت یہاں تک آپہنچی ہے کہ گلگت بلتستان کے عوام نے اس راہداری منصوبے کی بنیاد پر یا تو متنازعہ حیثیت کو ختم کرنے یا تیسرے فریق کے طور پر تسلیم کئے جانے کا مطالبہ کیا ہے ۔مذکورہ پروگرام سے یہ بات بھی بے نقاب ہوئی کہ جن صوبوں کے سیاسی قائدین نے بھرپور جدوجہد کی ہے ان کو پیچھے دھکیل دیا ہے تو گلگت بلتستان کی سیاسی قیادت نے تو ابھی تک کوئی جدوجہد شروع ہی نہیں کی ہے ۔اگر 46ارب ڈالر کا یہ منصوبہ متنازعہ ہوگیا تو یہ مغربی روٹ کی وجہ سے نہیں بلکہ گلگت بلتستان کی وجہ سے ہوگا گلگت بلتستان میں ایک نہیں بلکہ 25لاکھ سلیم صافی بیٹھے ہوئے ہیں وفاقی حکومت ہوش کے ناخن لیں۔

News

Yes, I’m Fat. It’s O.K. I Said It. by SARAI WALKER


By SARAI WALKER

A radical idea: You can love your body, even without losing weight.

Published: February 6, 2016 at 06:00PM

from NYT Opinion http://ift.tt/1L6i68N

Hot Stories